تپتی ہوئی دوپہر میں نمازیوں کی چھت پر نماز پڑھنے کی تصویریں سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئیں۔

جدہ(کائنات نیوز)  تپتی ہوئی دوپہر میں نمازیوں کی چھت پر نماز پڑھنے کی تصویر، سعودی حکومت نے اہم احکامات جاری کر دیے ۔۔۔سعودی عرب میں مساجد کی چھتوں پر نماز پڑھنے پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ اس پابندی کی خلاف ورزی کرنے والوں کو سزا کا سامنا کرنا ہو گا۔ یہ گزشتہ جمعة المبارک کے موقع پر جازان کی ایک مسجد میں نمازیوں کے چھتوں پر نماز ادا کرنے کی تصاویر وائرل ہونے کے بعد لگائی گئی ہے۔

وزارت اسلامی امور و تبلیغ کے جازان ریجن کے ترجمان محمد بن عبدہ نے کہا ہے کہ آئندہ مساجد کی چھتوں پر نماز پڑھنے کی اجازت نہیں ہو گی۔ یہ ایک غیر قانونی اقدام ہے ، اگر کوئی شخص مسجد کی چھت پر نماز پڑھتا پایا گیا تو اس کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔ وزارت اسلامی امور کی جانب سے جازان میں مزید مساجد کھولنے کی تیاریاں کی جا رہی ہیں۔ اگلے مرحلے میں مزید سینکڑوں مساجد کو جمعہ کی نماز کے لیے کھول دیاجائے گا۔ جس کے باعث لوگوں کا چند مساجد کی جانب رش کم ہو سکے گا جس سے نمازیوں میں کورونا کے پھیلاؤ کو روکنے میں بڑی مدد ملے گی۔ واضح رہے کہ سعودی حکومت نے مساجد میں نماز اور عبادت کے لیے نیا میکا نزم تیار کیا ہے۔مساجد کو اذان سے پندرہ منٹ قبل کھولا جائے گا اور فرض نماز کی ادائی کے 10 منٹ کے بعد مساجد کو بند کردیا جائے گا۔ اذان اور اقامت کے درمیان 10 منٹ کا وققہ ہوگا۔ نمازوں کی ادائی کے دوران مساجد کے تمام دروازے اور کھڑکیاں کھلی رکھی جائیں گی۔ عارضی طور پر مساجد سے قرآن پاک کے نسخے اور کتب اٹھا لی گئی ہیں۔ نئے میکانزم کے تحت دو نمازیوں کے درمیان دو نمازیوں کی جگہ خالی چھوڑی جائے گی جب کہ دو صفوں کے درمیان ایک صف خالی رکھی جائے گی۔مساجد کے تمام واٹر کولر بند کردیے جائیں گے۔

مساجد میں کسی قسم کے کھانے پینے کی اشیا تقسیم کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ نمازوں کے ادائی کے دوران مساجد کی وضو گاہ کو بند رکھا جائے گا۔ شہریوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ وضو گھروں سے کرکے مساجد میں آئیں۔

مزید پڑھیں! کورونا وائرس میں اس وٹامن کا استعمال کتنا ضروری ہے؟ مزید جانیئے اس پوسٹ میں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!