سندھ کا ناموارڈاکو مولانا طارق جمیل کےسامنے ہاتھ جوڑ کربیٹھتے ہی رونے کیوں لگ گیا

ناموارڈاکو

معروف مذہی سکالر مولانا طارق جمیل نے اپنے ایک خصوصی بیان میں کہا کہ گھوٹکی کے قریب ایک کچہ علاقہ ہے . وہاں میرا ایک بیان تھا اور سندھ کے ڈاکوئوں کا ایک بہت بڑا سردار میرے بیان میں آیا ہوا تھا . اگلے دن میں جب ناشتے پر بیٹھا تھا توڈاکوئوں کا وہ سردار مجھ سے ملنے آیا اور میرے سامنے بیٹھ گیا. اس ڈاکو کی اتنی دہشت تھی

کہ میں توبہ کرنے لگا . اسی اثنا میں ڈاکو نے سندھ کے اندازمیں ہاتھ باندھ کر مجھے سندھی لہجےمیں کہا کہ سائیں! آپ نےجو نبی ﷺ کے آبائو اجدا یعنی ان کے شجرہ نسب کو رات بیان کیا وہ انتہائی دل کو چھو لینے والا ہے. اس کے ساتھ ہی وہ ڈاکو رونے لگ گیا. اس نے صرف آپ ﷺ کا شجرہ نسب سن کر ہی تمام گناہوں سے توبہ کر لی اور اسی دن سے ڈاکوئوں والا پیشہ چھوڑ دیا. اس ڈاکو کے سر کی قیمت 50 لاکھ روپے تھی.

مزید پڑھیں! اگر آپ ان باتوں پر عمل کر لیں تو آپ کی زندگی بدل جائے گی؟

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!