شہد کی مکھیوں کے پیٹ میں بننے والی یہ دوائی بیشمار بیماریوں میں شفا ہے

کائنات نیوز! شہد کی مکھی ایک ایسا کیڑا ہے جو انسان کی صحت کے لیے جہاں شہد جیسا انتہائی مفید کھانا بناتی ہیں جس میں ہر بیماری کی شفا ہے وہاں یہ مکھیاں نمل موم (PROPELLIS) بھی بناتی ہیں، نمل موم شہد کی مکھیاں پھولوں اور کلیوں سےحاصل کرتی ہیں اور یہ اُن کے پیٹ میں بنتا ہے جسے وہ اپنے شہد کے چھتے اور اُس کے خانوں کو صاف رکھنے کے لیے استعمال کرتی ہیں۔

نمل موم کا استعمال طبیب حضرات کئی صدیوں سے کر رہے ہیں اور ماڈرن ادویات پر ریسرچ کرنے والے روزانہ اس کے نئے فائدے دریافت کرتے ہیں، نمل موم کا استعمال کئی طریقے سے کیا جاتا ہے، اسے چبا کے کھایا بھی جاتا ہے اور دُودھ میں ڈال کر پیا بھی جاتا ہے اور اس کا استعال اندرونی اور بیرونی زخموں کو بھرنے کے لیے صدیوں سے کیا جا رہا ہے اور نمل موم کے فوڈ سپلیمینٹ بھی بازار میں عام مل جاتے ہیں۔ ایلو پیتھی ادویات میں ڈاکٹر حضرات نمل موم کو کئی طرح کی بیماریوں کے خاتمے کے لیے استعمال کرواتے ہیں خاص طور پر گلے کے غدود کی خرابی کی صورت میں نمل موم انتہائی مفید ہے اس کے ساتھ ساتھ یہ حلق کی سوزش، جسم کے مختلف اعضا کی سوزش، کان کے ورم، سانس کی نالی کی سوزش، پھیپھڑوں کے ورم، اور نمونیہ جیسی بیماریوں کے خلاف ایک اکسیر کا درجہ رکھتا ہے اور نمل موم طبیب حضرات اور بہت سی بیماریوں میں استعمال کرتے ہیں جن میں فنگل انفیکشن اور وائرس اور بیکٹریا سے جُڑی بیماریاں شامل ہیں۔ نمل موم کا ٹینکچر آپ کو میڈیکل سٹور سے عام مل سکتا ہے اور نمل موم پنسار سے حاصل کرکے آپ خود بھی اس کا ٹنکچر تیار کر سکتے ہیں

ٹنکچر بنانے کا طریقہ

دو حصے نمل موم کو 9 حصے الکوحل میں ڈال کر کسی جار میں اچھی طرح شیک کریں اور اندھیری جگہ پر رکھ دیں اور ایک سے دو ہفتے روزانہ اس جار کو کم از کم ایک دفعہ ہلا کر اندھیری جگہ پر پڑا رہنے دیں اور مقررہ وقت کے بعد اس کوچھان کر استعمال کریں

مختلف بیماریوں میں ٹنکچر استعمال کرنے کے طریقے

گلے کے غدود کی خرابی اور سانس کی نالی کی سوزش کے لیے اس ٹنکچر کے چند قطرے سوڈیم کلورائیڈ میں ڈال کر غرارہ کریں، اس کے نتائج آپ کو فوراً حاصل ہوں گے اور حیران کر دیں گے۔ سوڈیم کلورائیڈ 10 حصےاور نمل موم ٹنکچر 1حصہ کپ میں ڈال کر مُنہ کی صفائی اور دانت کی بیماریوں کے لیے کلی کرنا انتہائی مُفید ثابت ہوتا ہے۔ سانس بند ہونے اور ناک کی سوزش کے لیے اس ٹنکچر کے ایک دو قطرے ناک میں ڈال لیں فوری شفا ملے گی۔ کان کے ورم اور سوزش کے لیے روئی کو ٹنکچر میں بھگو کر کان میں رکھ لیں، یا دو قطرے ٹنکچر کے کان میں ڈال لیں یہ جہاں فوراً درد سے آرام دے گا وہاں چند دفعہ کے استعمال سے یہ کان کے زخم بھر دے گا اور کان کی سوزش کا خاتمہ کردے گا۔ سانس کی بیماری کی صوارت میں 5 ملی لیٹر سوڈیم کلورائیڈ میں دو قطرے نمل موم ٹنکچر ڈال کر سونگھیں انشااللہ فوری شفا ہوگی۔

سارے جسم کی درد اور تکلیف کے لیے ایک چمچ دودھ میں 20 قطرے نمل موم ٹنکچر کے ڈال کر کھانے سے آدھا گھنٹا پہلے پی لیں بہت سی بیماریوں میں شفا ملے گی۔ گیس اور پیٹ کی بیماریوں کے لیے نیم گرم پانی میں 20 قطرے نمل موم ٹنکچر کے ڈال کر کھانے سے آدھا گھنٹہ پہلے پینا انتہائی مفید ثابت ہوتا ہے۔ جلد کی خرابی، زخم، بیرونی پھوڑا، اور فنگل انفیکشن کے خاتمے کے لیے اس ٹنکچر کو بطور لوشن استعمال کریں آپ اس کے فائدوں سے حیران ہو جائیں گے۔

جو حضرات نمل میں میں الکوحل شامل کرنا پسند نہ کریں وہ ایک چمچ نمل موم ایک کپ زیتون کے تیل میں ڈال کر ہلکی آنچ پر آدھا گھنٹہ پکائیں ، نمل موم تیل میں پوری طرح حل نہیں ہوگی اس لیے اس تیل کو ململ کے کپڑے میں دو سے تین دفعہ چھان لیں اور اس تیل کا بیرونی استعمال کریں خاص طور پر گلے کے غدود کی خرابی کے لیےگلے کی اس تیل سے ہلکی مالش کریں ، سانس کی بیماری اور ناک کی سوزش کے لیے انگلی سے تیل کے چند قطرے ناک میں لگائیں اور کان کے ورم کے لیے 2 سے 3 قطرے کان میں ڈال لیں۔ نوٹ: نمل موم کے ٹنکچر کو استعمال سے پہلے بہتر ہے کہ ایک دفعہ ڈاکٹر سے بھی مشورہ کر لیں اور ایسے افراد جو ڈرائیونگ کرتے ہیں اس کو پینے میں استعمال نہ کریں، چھوٹے بچوں کو بھی اس کا استعمال نہ کروائیں کیونکہ اُن کو اس سے الرجی ہونے کا خدشہ ہوتا ہے اس کے علاوہ حاملہ خواتین بھی اس ٹنکچر کا استعمال نہ کریں۔

مزید پڑھیں! نمک کے 10 ناقابل فراموش فائدے جو آپ کی زندگی بدل دیں گے

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!