’دریائے نیل کے قریب سے 1ہزار سال پرانی قبر دریافت قبر کھولی گئی اندر ایسا کیانکلا کے لوگ بیہوش ہو گئے

اسلام آباد (کائنات نیوز)  یہ زندگی فانی ہے ۔ آج جو اس جہان میں زندگی کے مزے لوٹ رہاہے کل اسے لازماً اندھیری قبر میں بھی جانا ہے۔ یوں تو قدرت کی کئی نشانیاں سامنے آتی رہتی ہیں مگر گزشتہ دنوں قدرت کی ایک اور نشانی سامنے آئی ۔ بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق ماہرین آثار قدیمہ کو دریائے نیل کے قریب واقع اس قدیم قبرستان میں ایک قبر ملی ۔

جب اسے کھولا گیا تو اس میں سے ایک لاش ملی جس پر سے گوشت نوچ نوچ کر اتار لیا گیا تھا ۔ ماہرین کا کہنا تھا کہ یہ اس دور کی قبور ہیں جس میں انسانی گوشت بڑی رغبت سے کھایا جاتا تھا ۔یوں تو انسانی تاریخ میں آدم خوری کی کئی مثالیں سامنے آتی ہیں تاہم یہ دریائے نیل کے قرب سے ملنے والی یہ لاش اپنی نوعیت کے اعتبار سے نہایت مختلف ہے۔ واضح رہے کہ اسی مقام سے اسی قسم کی مزید 124قبور بھی ملی ہیں

مزید پڑھیں! قبر میں دفن ہونے سے پہلے انسان کے پاس کتنے فرشتے آتے ہیں اور آکر کیا کہتے ہیں

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!