خبردار! میرے پاس مت آنا مجھے کرونا ہے،لڑکی نےڈرامہ کرکے عزت تار تار ہونے سے بچالی

وہان(کاےنات نیوز) چین میں خاتون کرونا ہونے کی اداکاری کے باعث زیادتی کا نشانہ بننے سے بچ گئی۔تفصیلات کے مطابق چینی خاتون نے سمجھداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنی عزت تار تار ہونے سے بچا لی،جب ایک لڑکا غلط نیت سے گھر میں داخل ہوا تو چینی خاتون نے کرونا وائرس میں مبتلا ہونے کی اداکاری کی جس کےباعث نوجوان وہاں سے چلتا بنا۔بتایا گیا ہے

کہ چینی خاتون اس وقت گھر میں اکیلی تھی جب ملزم گھر میں داخل ہوا۔بتایا گیا کہ چین کے شہر وہان میں کرونا وائرس تیزی سے پھیل چکا ہے جب کہ وہان میں تو کہ دہشت کی علامت بن چکا ہے ۔تاہم چینی خاتون نے سمجھداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے کرونا وائرس کو اپنے تحفظ کا ذریعہ بنا لیا۔جب چین کے شہر جنکشن میں ایک 25 سالہ لڑکے نے اس سے زیادتی کی کوشش کی تو اس نے کھانسنا شروع کر دیا اور نوجوان کو بتایا کہ میں وہان سے آئی ہوں اور کرونا وائرس کا شکار ہوں۔جب لڑکے نے زیادتی کی کوشش کی تو لڑکی نے کہا کہ میں وہان سے اس شہر میں آئی ہوں،چونکہ میں کرونا وائرس کا شکار ہوں اس لیے میں گھر میں اکیلی رہ رہی ہوں۔خاتون کی بات سننے کے بعد زیادتی کی نیت سے آنے والے لڑکے نے وہاں سے جانے میں ہی عافیت سمجھی۔خیال رہے کہ چین کی حکومت وائرس سے لڑنے کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہی ہے۔ وہان میں مریضوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کو مدنظر رکھتے ہوئے حکومت نے 10 دنوں میں 1000 بستروں کا ہسپتال بنایا تھا جس نے پوری دنیا کو حیران کیا تھا کہ کس طرح کوئی ملک 10 دنوں میں اتنا جدید ہسپتال بنا سکتا ہے۔لیکن ان تمام کاوشوں کے بعد بھی کرونا وائرس پر قابو نہیں پایا گیا۔ووہان کے ہسپتال کی ایک میڈیکل ورکر نے دعویٰ کیا ہے کہ کرونا وائرس سے ہلاکتیں بتائی گئی تعداد سے کہیں زیادہ ہے۔ کیونکہ جو لوگ ٹیسٹ کے انتطار میں ہی وائرس سے ہلاک ہو جاتے ہیں ان کو کرونا وائرس کا شکار نہیں سمجھا جاتا۔

 

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!