20 سال کے بعد لڑکیوں کی شادی اگر نہ کی جائے تو ان کے اندر کیا تبدیلی آنا شروع ہو جاتی ہے ؟

کائنات نیوز! ﻟﮍﮐﯽ ﮐﯽ ﺷﺎﺩﯼ ﮐﯽ ﺑﮩﺘﺮﯾﻦ ﻋﻤﺮ 20 ﺳﺎﻝ ﮬﮯ ، ﺍﺱ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﮬﺮ ﮔﺰﺭﻧﮯ ﻭﺍﻻ ﺩﻥ ﺍﺱ ﮐﯽ ﻟﮍﮐﭙﻦ ﮐﯽ ﻣﻮﺕ ﮬﻮﺗﯽ ﮬﮯ ،، 30- 25 ﺳﺎﻝ ﮐﯽ ﺧﺎﺗﻮﻥ ﮔﮭﺮ ﺑﯿﭩﮭﮯ ﻧﻔﺴﯿﺎﺗﯽ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﺳﺎﺱ ﺑﻦ ﺟﺎﺗﯽ ﮬﮯ ﺟﺲ ﻃﺮﺡ ﭨﻮﮐﺮﯼ ﻣﯿﮟ ﺭﮐﮭﺎ ﭘﯿﺎﺯ ،ﻟﮩﺴﻦ ﺍﻭﺭ ﺍﺩﺭﮒ ﺧﻮﺩ ﺑﺨﻮﺩ ﺍُﮒ ﺁﺗﺎ ﮬﮯ ، ﺍﺏ ﺷﺎﺩﯼ ﮬﻮ ﺑﮭﯽ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﻮ ﺍﯾﮏ ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ ﺩﻭ ﺳﺎﺳﯿﮟ ﺗﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮦ ﺳﮑﺘﯿﮟ ،،20 ﺳﺎﻝ ﮐﯽ ﻟﮍﮐﯽﮬﻮﺗﯽ ﮬﮯ

ﻭﮦ ﮬﺮ ﻗﺴﻢ ﮐﮯ ﺣﺎﻻﺕ ﻣﯿﮟ ﺍﭘﻨﮯ ﺁﭖ ﮐﻮ ﺍﯾﮉﺟﺴﭧ ﮐﺮ ﻟﯿﺘﯽ ﮬﮯ ،، ﺟﺒﮑﮧ 30 ﺳﺎﻟﮧ ) ﻟﮍﮐﯽ ( ﺩﻭ ﭼﺎﺭﺍﯾﻢ ﺍﮮ ﺗﻮ ﮐﺮ ﻟﯿﺘﯽ ﮬﮯ ﻣﮕﺮ ﺩﻭ ﭼﺎﺭ ﺑﭽﮯ ﭘﯿﺪﺍ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﮯ ﻗﺎﺑﻞ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮬﺘﯽ ،،ﺍﯾﺴﯽ ﺑﭽﯽ ﮐﮯ ﺑﭽﮯ ﻋﻤﻮﻣﺎً ﺷﻮﮬﺮ ﮬﯽ ﭘﺎﻟﺘﺎ ﮬﮯ ،، ﻣﺮﺩﻭﮞ ﮐﻮ ﮈﺑﻞ ﺍﯾﻢ ﺍﮮ ﻟﮍﮐﯽ ﭼﺎﮬﺌﮯ ﮬﻮﺗﯽ ﮬﮯ ﺗﺎ ﮐﮧ ﺑﭽﻮﮞ ﮐﻮ ﭨﯿﻮﺷﻦ ﭘﮍﮬﺎ ﺳﮑﮯ ،ﺍﻭﺭ ﮈﺑﻞ ﺍﯾﻢ ﺍﮮ ﮐﺮﺗﯽ ﻟﮍﮐﯽ ﮐﯽ ﺑﭽﮯ ﭘﯿﺪﺍ ﮐﺮﻧﮯ ﮐﯽ ﺻﻼﺣﯿﺖ 35 ﻓﯿﺼﺪ ﺭﮦ ﺟﺎﺗﯽ ﮬﮯ ،،،،،،ﮐﭽﮫ ﻟﮍﮐﯿﺎﮞ ﮈﺭﺍﻣﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺗﻮ ﺩﻟﮩﻦ ﺑﻨﺘﯽ ﺭﮬﺘﯽ ﮬﯿﮟ ﻣﮕﺮ ﺍﺻﻠﯽ ﺭﺷﺘﮯ ﭨﮭﮑﺮﺍﺗﯽ ﺭﮬﺘﯽ ﮬﯿﮟ ﮐﮧ ﺍﺱ ﻃﺮﺡ ﻣﺎﺭﮐﯿﭧ ﮈﺍﺅﻥ ﮬﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﯽ ،، ﺍﻭﺭ ﺟﺐ ﺭﺷﺘﮯ ﺧﺘﻢ ﮬﻮ ﺟﺎﺗﮯ ﮬﯿﮟ ﺗﻮ ﭘﮭﺮ ﮐﺴﯽ ﮐﯽ ﺩﻭﺳﺮﯼ ﺑﯿﻮﯼ ﺑﻨﻨﮯ ﮐﮯ ﺳﻮﺍ ﮐﻮﺋﯽ ﭼﺎﺭﮦ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮬﺘﺎ ،،،،،،،،،،،،ﺟﺐ ﺍﺱ ﻧﯿﺖ ﺳﮯ ﺗﻌﻠﯿﻢ ﺩﻻﺋﯽ ﺟﺎﺋﮯ ﮐﮧ ﻃﻼﻕ ﮐﯽ ﺻﻮﺭﺕ ﻣﯿﮟ ﮔﮭﺮ ﭼﻼﺋﮯ ﮔﯽ ﺗﻮ 98 ٪ ﮐﯿﺴﺰ ﻣﯿﮟ ﻃﻼﻕ ﮬﻮ ﮬﯽ ﺟﺎﺗﯽ ﮬﮯ ،ﺍﻧﻤﺎ ﺍﻻﻋﻤﺎﻝ ﺑﺎﻟﻨﯿﺎﺕ ،، ﺟﺐ ﺍﻟﻠﮧ ﺗﻮﮐﻞ ﺩﻭ ﺗﻮ ﺭﺍﻧﯽ ﺑﻦ ﮐﺮ ﮐﮭﺎﺗﯽ ﮬﮯ ،، ﺍﯾﻒ ﺍﮮ ﺑﮩﺖ ﺗﻌﻠﯿﻢ ﮬﮯ ،، ﺟﺐ ﺗﮏ ﺭﺷﺘﮧ ﻧﮧ ﺁﺋﮯ ﻣﺰﯾﺪ ﺑﮭﯽ ﺩﻻﺋﯽ ﺟﺎ ﺳﮑﺘﯽ ﮬﮯ ﻣﮕﺮ ﺁﻧﮯ ﻭﺍﻟﮯ ﺭﺷﺘﮯ ﮐﻮ ﺗﻌﻠﯿﻢ ﮐﮯ ﻟﺌﮯ ﻣﺴﺘﺮﺩ ﮐﺮﻧﺎ ﮐﻔﺮﺍﻥِ ﻧﻌﻤﺖ ﮬﮯ ﺟﺲ ﮐﺎ ﻧﺘﯿﺠﮧ ﭨﮭﯿﮏ ﻧﮩﯿﮟ ﻧﮑﻠﺘﺎ -،، ﺑﻌﺾ ﻭﺍﻟﺪﯾﻦ ﺗﻮ ﺩﻋﺎﺋﯿﮟ ﮐﺮﺗﮯ ﮬﯿﮟ ﮐﮧ ﮐﻮﺋﯽ ﺳﺎ ﺑﮭﯽ ﺭﺷﺘﮧ ﺁﺋﮯ ﭼﺎﺭ ﭼﺎﺭ ﺑﭽﯿﺎﮞ ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ ﺑﻮﮌﮬﯽ ﮬﻮ ﺭﮬﯽ ﮬﯿﮟ ، ﺟﺒﮑﮧ ﺩﻭﺳﺮﯼ ﺟﺎﻧﺐ ﻭﮦ ﺑﮭﯽﮬﯿﮟ ﺟﻦ ﮐﮯ ﺭﺷﺘﮯ ﺁﺗﮯ ﮬﯿﮟ ﺗﻮ ﻭﮦ ﮐﺒﮭﯽ ﺑﺮﺍﺩﺭﯼ ﮐﺎ ﺑﮩﺎﻧﮧ ﺑﻨﺎ ﮐﺮ ﺍﻭﺭ ﮐﺒﮭﯽ ﺗﻌﻠﯿﻢ ﮐﺎ ﺑﮩﺎﻧﮧ ﺑﻨﺎ ﮐﺮ ﺭﺷﺘﮧ ﺭﺩ ﮐﺮ ﺩﯾﺘﮯ ﮬﯿﮟﺍﮔﺮ 20 ﺳﺎﻝ ﮐﯽ ﻋﻤﺮ ﻣﯿﮟ ﺷﺎﺩﯼ ﮬﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﻮ ﺍﯾﮏ ﺩﻭ ﺗﯿﻦ ﺳﺎﻝ ﻣﯿﮟ ﻃﻼﻕ ﺧﺪﺍﻧﺨﻮﺍﺳﺘﮧ ﮬﻮ ﺑﮭﯽ ﺟﺎﺋﮯ

ﺗﻮ ﻟﮍﮐﯽ ﺩﻭﺳﺮﯼ ﺟﮕﮧ ﺑﯿﺎﮬﯽ ﺟﺎ ﺳﮑﺘﯽ ﮬﮯ ﯾﻌﻨﯽ 24 ﺳﺎﻝ ﺗﮏ ﺩﻭﺳﺮﯼ ﺷﺎﺩﯼ ﮐﮯ ﺍﻣﮑﺎﻧﺎﺕ ﺑﮭﯽ 75 ٪ ﮬﻮﺗﮯ ﮬﯿﮟ ،ﻟﯿﮑﻦ ﭘﮩﻠﯽ ﺷﺎﺩﯼ ﮬﮯ 27 ﺳﺎﻝ ﮐﯽ ﻋﻤﺮ ﻣﯿﮟ ﮐﯽ ، ﺩﻭ ﭼﺎﺭ ﺳﺎﻝ ﮐﮯ ﺩﻧﮕﻞ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﻃﻼﻕ ﮬﻮ ﺑﮭﯽ ﮔﺊ ﺗﻮ 30 ﺳﺎﻝ ﮐﯽ ﻃﻼﻕ ﯾﺎﻓﺘﮧ ﮐﮯ ﺷﺎﺩﯼ ﮐﮯ ﺍﻣﮑﺎﻧﺎﺕ ﻧﮧ ﮬﻮﻧﮯ ﮐﮯ ﺑﺮﺍﺑﺮ ﮬﻮﺗﮯ ﮬﯿﮟ ،، ﯾﮧ ﻣﯿﺮﮮ ﺗﺠﺮﺑﺎﺕ ﮐﺎ ﻧﭽﻮﺭ ﮬﮯ ، ﺍﺱ ﮐﻮ ﺍﯾﺰﯼ ﻣﺖ ﻟﯿﮟ ﭘﻠﯿﺰ ،، ﺭﮦ ﮔﯿﺎ ﺭﺯﻕ ﺗﻮ ﻭﮦ ﻋﻮﺭﺕ ﮐﮯ ﻣﻘﺪﺭ ﻣﯿﮟ ﮬﻮﺗﺎ ﮬﮯ ، ﻧﻮﭦ ﮐﮯ ﯾﮧ ﺩﻭﻧﻮﮞ ﭨﮑﮍﮮ ﻣﻠﺘﮯ ﮬﯿﮟ ﺗﻮ ﻣﺎﻟﯽ ﺣﺎﻟﺖ ﺑﮩﺘﺮ ﮬﻮ ﺟﺎﺗﯽ ﮬﮯ ،، ﺍﮐﯿﻼ ﻣﺮﺩ ﺍﮔﺮ ﯾﮧ ﺷﺮﻁ ﻟﮕﺎ ﻟﮯ ﮐﮧ ﺟﺐ ﺗﮏ ﻭﮦ ﮐﺮﻭﮌ ﭘﺘﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﻨﮯ ﮔﺎ ﺍﻭﺭ ﺑﺤﺮﯾﮧ ﺗﺎﺅﻥ ﻣﯿﮟ ﮐﻮﭨﮭﯽ ﻧﮧ ﮬﻮ ﺗﻮ ﺷﺎﺩﯼ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﮮ ﮔﺎ ، ﺗﻮ ﯾﻘﯿﻦ ﮐﺮﯾﮟ ﺍﺱ ﮐﮯ ﺳﺎﺭﮮ ﺑﮭﺎﺋﯽ ﺑﯿﺎﮬﮯ ﺟﺎﺋﯿﮟ ﮔﮯ ﺍﺱ ﮐﯽ ﺷﺎﺩﯼ ﺍﻥ ﺷﺎﺀ ﺍﻟﻠﮧ ﻧﮩﯿﮟ ﮬﻮ ﮔﯽ ،، ﺷﺎﺩﯼ ﺑﮩﺖ ﺑﮍﺍ ﺑﮓ ﺑﯿﻨﮓ ﮬﻮﺗﺎ ﮬﮯ ﺣﺎﻻﺕ ﻣﯿﮟ ﺗﺒﺪﯾﻠﯽ ﮐﺎ ،،ﮬﺮﯼ ﺍﭖ ﺑﻮﺍﺯﺋﺰ ،، ﻟﮓ ﺟﺎﺅ ﺍﻣﯽ ﺍﺑﻮ ﮐﮯ ﭘﯿﭽﮭﮯ.

جاپانی شہری صبح کی بجائے ہمیشہ رات کو سونے سے پہلے کیوں نہاتے ہیں؟

2 Comments

  • I’m sorry to say but you can’t generalize this topic with sensitive issues . Also you should support your viewpoints on subject matter with facts not how you perceive girls education and their family problems

  • لڑکا کم پڑھی ہوئی لڑکی کو قبول کر سکتا ہے لیکن جب لڑکی پڑھ لکھ جاۓ تو اسکی ڈمانڈز بڑھ جاتی ہیں۔ زیادہ تر لڑکیوں کے والدین کی ڈمانڈ ہوتی ہے کہ لڑکا پڑھا ہو ہو اور اچھی نوکری ہو اور اپنا گھر ہو اسی سے شادی کریں گے۔ چاھے لڑکی گھر بیٹھی بوڑھی ہو جائے۔ اگر ان کو اس طرح کا لڑکا مل بھی گیا اور شادی کے بعد لڑکا کرائسز میں چلا گیا گھر بک جاۓاور نوکری ختم ہو جاۓ تو لڑکی کے والدین کیا کریں گے؟ یہ تو سب ﷲ دیتا ہے انسان کو۔ والدیں کو یہ لازمی سوچنا چاہئے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!