کھلے انگوٹھے والی جوتے پہننا صت کیلئے انتہائی خطرناک ثابت،جانیں

کائنات نیوز! کھلے جوتے یا پھر گھر میں استعمال کے لئے وہ جوتے جو انگوٹھے والی جوتیاں کہلاتی ہے یہ ۔جوتے پورے دنیا میں استعمال کی جاتی ہے اور ہم میں سے بھی اکثر اس کا استعمال کرتے ہیں ۔ اور خاص کر گرمیوں اور بارش میں اس کا استعمال بڑھ جاتا ہے اور لوگ اس موسم ان کو پہننا پسند کرتے ہیں

اور کچھ لوگ تو اس کا استعمال سردیوں کے شروع تک کرتے ہیں اس کو پسند کرنے کی وجہ صاف ظاہر ہے کیونکہ اس جوتے میں پاؤں کو ہوا بڑی آسانی سے لگتی ہے اور پاوں میں پسینہ نہیں آتا ۔لیکن جیسے کسی بھی سکہ کا ایک رخ نہیں ہوتا اسی طرح ان کے فوائد جہاں ہے اس کے ساتھ اس جوتے کے بہت سے نقصانات بھی ہے جن کو جاننے کے بعد آپ اس ۔جوتے کا ستعمال ترک کر دیں گے ۔ اس کا نام انگریزی میں فلپ فلوپ پڑا ہے کیونکہ چلنے کے دوران اس سے اس طرح کی آواز نکلتی ہے ۔ فلپ فلوپ کے نقصاناتیہ جوتے ایسے ہیں کہ لمبے سفر کے لئے ان کا استعمال نہیں کیا جاتا اور نہ ہی یہ اس طرح کے سفر کے لئے بنائے گئے ہیں اس لئے اگر اس میں چہل قدمی زیادہ کی جائے تو اس سے پیروں میں درد اور کھردرا پن پیدا ہوتا ہے اور اس سے پاؤں میں چھالے پڑ جاتے ہیں جو مزید تکلیف کا سبب بنتے ہیں اور

اس سے مزید بیماریاں بھی پیدا ہوتی ہے آخر ایسا ہوتا کیوں ہےآپ سوچتے ہونگے کہ ایسا ہوتا کیوں ہے چلے یم وجہ جانتے ہیں ۔ جب یہ جوتا استعمال کرتے ہیں تو یہ جوتا آپ کے پاوں کی سطح کو ہموار نہیں ہونے دیتا بلکہ اس کی سطح قدرے ٹیڑھی ہوتی ہے جس کی وجہ سے پاؤں میں چھالے پڑتے ہیں اور ان کا بروقت علاج نہ کیا جائے تو وقت کے ساتھ یہ مزید بڑتے ہیں پاؤں کو سہارا چاہیے ہوتا ہےجب بھی پیدل سفر کرتے ہیں تو اس وقت پاؤں کو ایک خاص تک سیدھا رہنے میں سہارا چاہیے ہوتا ہے ۔

لیکن اگر دیجھا جائے تو ان جوتوں میں کسی قسم کا سہارا نہیں ہوتا جس کی وجہ پاوں کی مخصوص ساخت متاثر ہوجاتی ہے ۔ جس سے پاؤں میں درد شروع ہو جاتا ہے ۔ اس کا مسلسل استعمال پٹھوں کو متاثر کرتا ہے اور اگر پٹھے متاثر ہوجائے تو اس سے چلنے میں بھی رکاوٹ شروع ہوجاتی ہے آپ سمجھتے ہیں کہ کھلے جوتے بہتر ہے کیونکہ اس سے پاؤں میں پسینہ نہیں آتا لیکن اس سے زیادہ خطرے کی بات یہ ہے کہ پاوں کو فنجی کا خطرہ ہوتا ہے اگر ان جوتوں کو غور سے دیکھا جائے تو ان میں بھی فنجی لگی ہوتی ہے جو پاؤں کو متاثر کرتی ہے جو اس کے فوم کی وجہ سے پیدا ہوتی ہے اور

اس کے بڑنے کا خطرہ تب زیادہ ہو جاتا ہے جب اس کا استعمال پانی میں زیادہ ہو یا بارش میں یہا آب و ہوا ایسی ہو جس میں نمی زیادہ ہوتی ہے تو وہاں فنجی کے پیدا ہونے کا موقع زیادہ ہوتا ہےان جوتوں کے استعمال کرنے والوں کو اکثر اس بات کا مشاہدہ ہوا ہوگا کہ اس کے اس کے استعمال کے بعد انگوٹھے کی درمیان کی جگہ سرخ ہو جاتی ہے اور اس میں بعض دفعہ خارش بھی ہوتی ہے اور اگر اس کا استعمال کثرت سے کیا جائے تو اس سے مزید تکلیف اور زخم بن جانے کا اندیشہ پیدا ہوتا ہےایسے ہی جوتوں کا پہنا جو پاؤں کو سہارا نہ دیتے ہو وہ براراست سارا وزن آپ کی ایڑیوں کی طرف منتقل کردیتا ہے خاص کر انگوٹھے کی طرف وزن زیادہ ہوجاتاہے ۔

جس کی وجہ سے انگوٹھے میں اور پاؤں کے پھٹوں میں کچھاؤ شروع ہوجاتا ہے اور اس کے دیر پا استعمال سے پھر درد کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ اور اگر اس کا استعمال ترک نہ کیا جائے تو اس سے آپ کے پاؤں کی انگلیاں ٹیڑھی ہونے لگ جاتی ہے خاص کر انگوٹھا مڑنے لگ جاتا ہے اور اس کی شکل کسی ہتھوڑے کی طرح ہو جاتی ہے ۔ یہاں سے پھر آپ کی انگوٹھے کبھی سیدھے نہیں ہوتے ہاں اگر سیدھے کرنےہو تب بھی سرجری سے گزرنا پڑتا ہے ۔ان جوتوں کے پہننے میں اکثر گرنے کا خطرہ درپیش ہوتا ہے جس سے جسم کو دیگر چوٹوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور اس سے زیادہ کا اندیشہ بھی ہوتا ہے ۔Dangers of flip flops اس لئے کہ برا وقت کبھی بھی آسکتا ہے حتی کہ بہت محتاط شخص بھی چلنے کے دوران اس کی وجہ سے گر سکتا ہےDangers of flip flops کیا کبھی آپ نے سوچا ہے کہ دوڑ کے مقابلے میں حصہ لینے والا کھلاڑی کھلا جوتا استعمال نہیں کرتے ۔ کیا کبھی آپ نے ایسا تجربہ کیا ہے ۔ اگ نہیں کیا تو آج ہی ان جوتوں میں تھوڑی دیر تک بھاگے ۔

معلوم ہو جائے گا کہ کیوں ان میں دوڑنا نہیں چاہیے ایسے ہی یہ جوتے آپ کی ایڑھی کو بھی زخمی کرتا ہے اور ایسے ہی پاؤں کا تلوہ بھی اس سے خراب ہو تا ہے ۔ کیونکہ جب آپ کسی سخٹ جگہ پر یا سخت زمین پر چلتے ہیں تو ان کی ساخت آپ کے پاؤں کی حفاظت اس کی سختی سے نہیں کر پاتی کیونکہ ان کی نچلی سطح باریک ہوتی ہے ۔

گھر میں جوتےنہ پیہننے کا حیران کن فائدہ،جاپانیوں کی یہ رسم آپکی صحت کی ضامن جانیے کیسے

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!