بیٹا اپنی نابینا ماں کو بیوی کے کہنے پر راستے میں پھینک گیا

اسلام آباد (کائنات نیوز) پولیس کو نہ بتا نا ورنہ وہ میرے بیٹے کو ماریں گے ، بیٹا اپنی نابینا ماں کو بیوی کے کہنے پر راستے میں پھینک گیا مگر کیا کہتی رہی ، پاکستان کے اہم شہر میں انسانیت سوز واقعہ پیش آگیا۔۔۔ بدبخت بیٹا اپنی اندھی ماں کو بیوی کے کہنے پر راستے میں پھینک گیا۔ تفصیلات کے مطابق یہ واقع لاہور میں پیش آیا ہے

جہاں ایک بدبخت بیٹا اپنی بوڑھی ماں کو اپنی بیوی کی وجہ سے سڑک کنارے چھوڑ گیا ہے لیکن کچھ نوجوانوں نے اس خاتون کی مدد کی اور اسے پناہ گاہ تک پہنچا دیا۔ حمزہ بٹ نوجوان نے معمر خاتون کی مدد کی۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے حمزہ بٹ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ہم کچھ دوست بارش رکنے کا انتظار کر رہے تھے جس دوران ایک شخص معمر خاتون کو سڑک کنارے چھوڑگیا، کسی پناہ گاہ یا فلاحی ادارے نے ہماری مدد نہ کی، پولیس کے ایکشن کے بعد ایک پناہ گاہ نے نابینا خاتون کو اپنے پاس رکھا۔ بات کرتے ہوئے حمزہ بٹ کا کہنا تھا کہ ہم پہلے در در بھٹکتے رہے کہ شاید کوئی شخص خاتون کو پہنچان لے، لیکن کسی نے نہیں پہنچانا۔ مزید بات کرتے ہوئے نوجوان کی جانب سے بتایا گیا کہ ابتدائی طور پر جب مقامی پولیس اسٹیشن سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بھی مدد کرنے سے انکار کر دیا، لیکن بعد میں ایس پی لاہور سے رابطہ کیا گیا جس کے بعد پولیس حرکت میں آئی اور ہماری مدد کی گئی۔ حمزہ بٹ نے بتایا ہے کہ اگلے دن پولیس کے تعاون کے بعد خاتون کو داتا دربار پولیس اسٹیشن جمع کروا دیا گیا جہاں انہیں کھانا کھلانے کے بعد ایدھی سنٹر بھیج دیا گیا۔ حمزہ کا کہنا تھا کہ اس سے قبل ہم نے کئی این جی اوز سے بھی رابطے کئے اور ہر ممکن کوشش کی کہ ان کی کوئی مدد کی جا سکے، لیکن کوئی ادارہ انہیں اپنے پاس رکھنے کو تیار نہ تھا۔ بات کرتے ہوئے نوجوان نے بوڑھی ماں کے بیٹے سے اپیل کی ہے

کہ وہ اپنی ماں کو اپنے گھر لے جائے، ان کے خرچے کے پیسے وہ دینے کو تیار ہیں۔ اردوپوائنٹ سے بات کرتے ہوئے معمر خاتون نے بتایا ہے کہ میری بہو میرے ساتھ مناسب سلوک نہیں کرتی تھی، مجھ پر تشدد کرتی تھی، میری بات نہیں کرتی تھی، اگر میں کچھ کہہ دوں تو مجھ سے لڑائی کرتی تھی۔ خاتون کی جانب سے مزید بتایا گیا ہے کہ میری بہو مجھے روٹی بھی کبھی کبھی دیتی تھی، میں نے جب اپنے بیٹے کو اس بارے بتایا تو اس نے اپنی بیوی سے بات کی لیکن اس کا بھی کوئی اثر نہیں ہوا۔ بوڑھی ماں نے بات کرتے ہوئے اس بات سے بھی انکار کر دیا کہ کوئی میرے بیٹے کی پولیس میں شکایت نہ کرے، وہ اسے ماریں گے۔ بوڑھی ماں کا کہنا تھا کہ میری بیٹی کہتی تھی کہ میں اس کے پاس چلی جاؤں، لیکن میں نہیں گئی، لیکن میں اب اپنی بیٹی کے پاس جا رہی ہوں

ظالموں نے بے زبان جانوروں کو بھی نہ بخشابکرے کو کس جرم میں گرفتار کر لیا گیا

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!