پاکستان کی ناموراداکارہ نرگس کی زندگی کی اصل کہانی، جانیئے

کائنات نیوز! آج کا ہمارا کالم تو ہے اسٹیج کی ایک ایکٹرس کے بارے میں جس نے اپنے دور میں بہت،، کمائی،، کی، بڑا نام بنایا، بڑے اسکینڈلز جنم دیے پھر اچانک،،، حاجن ، بن گئی ، عبایہ پہن لیا، لیکن وہ عبایہ کا وزن زیادہ دیر برداشت نہ کرسکی، ماضی میں لوٹنا چاہا،نامور کالم نگار خاور نعیم ہاشمی اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔ مگر ماضی نے قبول کرنے سے انکار کر دیا،

بے شک گزرا وقت کبھی لوٹ کر نہیں آتا، لیکن کیوں نہ اس رقاصہ کے تذکرے سے پہلے تھوڑی سی بات ہو جائے آج کی فلم انڈسٹری کے بارے میں۔ پاکستان فلم کی تاریخ کے اوراق کبھی کبھار سامنے آتے رہتے ہیں لیکن یہ حقیقت اپنی جگہ اٹل ہے کہ آج کی فلم انڈسٹری اپنی ہی تاریخ کی الف ب سے بھی نابلد ہے۔ آج کے سپر اسٹارز وہ لڑکے ہوں یا لڑکیاں، انہیں اس سے دلچسپی ہو بھی نہیں سکتی۔ کیونکہ آج وہ فلمیں بن ہی نہیں رہیں جو فلم کی تعریف پر پوری اترتی ہوں۔ میں ایک تکنیکی بات کر رہا ہوں۔ ہم بڑی اسکرین پر چھوٹی اسکرین کے ٹیلی پلے دیکھ رہے ہیں۔ فلم کی اس نئی تعریف کی بنیاد مختلف چینلز نے فلم کے شعبہ میں فنانسنگ کرکے رکھی، یہ فلمیں زیادہ تر مختلف اداروں کے اشتراک سے بنائی گئیں۔ آپ ان فلموں کو اشتہاری فلمیں بھی کہہ سکتے ہیں۔ ان میں کئی بہت اچھی’’فلمیں‘‘ بھی تھیں، کئی نے عالمی ایوارڈز بھی حاصل کئے، لیکن یہ’’اچھی فلمیں‘‘ بھی ڈاکو منٹری یا ٹیلی فلمیں ہی تھیں۔ حال ہی میں ’’باجی‘‘اور ’’سپر ماڈل‘‘ جیسی موویز نے شائقین کی توجہ حاصل کی، میں نے بھی یہ فلمیں دیکھیں اور اسی نتیجے تک ہی پہنچا کہ یہ فلمیں بنانے والے فلم کی بنیادی تکنیک سے بہرہ ور نہیں ہیں۔ حالانکہ فلم کے ہر شعبہ میں ابھی کچھ لوگ زندہ ہیں جن میں سے کچھ شام ڈھلنے کےبعد ویران ایور نیو اسٹوڈیو کے کسی نہ کسی کونے میں اپنے شاندار ماضی میں کھوئے ہوئے نظر آتے ہیں۔ یہ فلم انڈسٹری کے اساتذہ کرام ہیں ،

اب یہ دنیا میں مہمان اداکار کی طرح ہیں، ہم ان سے استفادہ کر سکتے ہیں، ان کو عزت دے سکتے ہیں، ان کے گھروں میں دو وقت کا چولہا جلا سکتے ہیں، یہ آپ کے ساتھ بہت شفقت بہت محبت کا مظاہرہ کریں گے، آپ کو حقیقی فلم میکر بنا دیں گے۔ آج فلمی دنیا کا اقتدار جن لوگوں کے ہاتھ میں ہے وہ نہ صرف اپنے اقتدار کو دوام دے سکتے ہیں بلکہ صحیح معنوں میں انڈسٹری کو دوبارہ پاؤں پر کھڑا کر سکتے ہیں، اس وقت انڈسٹری صرف اس لئے کراچی میں ہے کیونکہ وہاں ملٹی نیشنل کمپنیوں کے ہیڈ آفسز ہیں لیکن لاہور میں بیکار بیٹھے ہنرمندوں کو نظر انداز کرکے ہم اپنا مستقبل شاید تابناک نہ بنا سکیں۔ آج اس نرگس کے بعض واقعات لکھ رہا ہوں ، جس کے بولڈ ڈانسز نے اسٹیج ڈرامے کو سلا دیا تھا، اس ’’نیک کام‘‘ میں وہ اکیلی نہیں تھی، اس کی تقلید میں بہت ساریوں نے اس جیسے مکالمے بولنا شروع کر دیے تھے اور اس جیسا لباس اوڑھنا شروع کر دیا تھا ، اس واردات میں اس کی بہن دیدار نے بھی خوب ہاتھ بٹایا، نرگس کو عالمی شہرت ملی۔ ایک تھانیدار کے ہاتھوں اتنی مار پڑی تھی کہ اس کی بہن دیدار نے پیش گوئی کردی کہ نرگس زندگی میں کبھی ماں نہ بن سکے گی،

مزید پڑھیں! معروف اداکارہ حرا مانی کی 12 سالہ پرانی تصویر نے سب کو حیران کردیا

اپنی رائے کا اظہار کریں