فیصل آباد:ڈولفن اہلکار کا معمولی بات پر اپنی والدہ پر تشدد، دھکے دیتے ہوئے کپڑے پھاڑ دیئے،جانیے

ڈولفن

فیصل آباد (کائنات نیوز) ڈولفن اہلکار کا معمولی بات پر اپنی والدہ پر تشدد، دھکے دیتے ہوئے کپڑے بھی پھاڑ دیئے، ضعیف العمر خاتون انصاف لینے عدالت پہنچ گئی، فاضل عدالت نے متعلقہ تھانے سے 27اگست کو رپورٹ طلب کر لی۔ تفصیلات کے مطابق تھانہ چک جھمرہ کے چک 110 ج ب ملازم آباد (آبادی حوالیاں) کی بیوہ خاتون کو گھر میں اس کے ڈولفن پولیس میں تعینات بیٹے شاہدمحمود نے معمولی

بات پر تشدد کا نشانہ بنایا گالی گلوچ کرتے ہوئے دھکے دیئے جس سے اس کے جسم پر چوٹیں آئیں اور کپڑے پھٹنے سے مذکوریہ نیم برہنہ ہو گئی بیٹے کی غنڈہ گردی کے خلاف متعلقہ تھانہ میں درخواست دی لیکن کوئی شنوائی نہ ہوئی جس کے بعد سی پی او آفس میں دی جانے والی درخواست بھی ردی کی ٹوکری میں چلی گئی جس پر متاثرہ بیوہ کلثوم ناصر نے جسٹس آف پیس کی عدالت میں پٹیشن دائر کی جس پر فاضل عدالت نے رپورٹ طلب کر لی

مزید پڑھیں ! کہانی میں نیا موڑ، ڈاکٹر ماہا علی کی خود کو ختم کرنے کا ڈراپ سین ، ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ نے

اپنی رائے کا اظہار کریں