حجاج بن یوسف نے اپنی ماں سے پوچھا کہ ماں بتائو میں جنت میں جائوں گا یا دوزخ؟ پڑھیں تاریخی واقعہ

ماں ب

اسلام آباد (کائنات نیوز)  یہ قصہ حجاج بن یوسف سے منسوب ہے کہ جب وہ مرنے لگا تو اپنی ماں سے پوچھا کہ ماں بتائو میں جنت میں جائوں گا یا دوزخ؟ ماں نے کہا کہ جو تمہارے کرتوت ہیں اس حساب سے تم دوزخ کے مکین بنو گے۔ اس نے پوچھا ماں! یہ بتائو کہ اگر تم نے میرے جنت دوزخجانے کا فیصلہ کرنا ہو تو تمہارا فیصلہ کیا ہوگا۔

ماں نے ٹھنڈی آہ بھری کہ بیٹا میں تو ماں ہوں کب چاہوں گی کہ تم جہنم کی آگ میں جلو۔ حجاج بن یوسف نے مسکرا کر کہا کہ اب مجھے کوئی فکر نہیں کہ میں نے سنا ہے کہ اللہ کو اپنے بندوں سے 70 مائوں جتنا پیار ہے۔ قصہ تمام۔ میں حجاج بن یوسف کے اطمینان سے اختلاف کروں گا کہ کوئی شک نہیں اللہ تعالیٰ کو اپنے بندوں سے 70 مائوں جتنا پیار ہے اور بے شک وہ غفور و رحیم ہے اور بے حد رحم کرنے والا ہے مگر یاد رکھیے کہ وہ عدل کرنے والا ہے اور اس نے یہ بھی کہا کہ اگر کسی نے اس کی مخلوق پر ظلم کیا ہے‘ اسے معافی نہیں۔ اپنے معاملات میں تو ہو سکتا ہے وہ درگزر کرے‘ رحم فرمائے۔ یاد رکھیے کہ جہاں دوسرے فرد کا معاملہ آجائے تو پھر فیصلہ عدل کے معیار پر ہوگا۔ پھر شفقت اور ماں والی محبت والا معاملہ نہیں چلے گا۔

مزید پڑھیں! لکھنئو کے بازار میں ایک غریب درزی کی دکان تھی جو ہر جنازے کیلئے دکان بند کرتے تھے

اپنی رائے کا اظہار کریں