“پیسے نکال نہیں تو دوں گا ایک الٹے ہاتھ کی”کریم ڈرائیور کی مسافر خاتون سے بدتمیزی، پھر کیا ہوا

اسلام آباد (کائنات نیوز)  پیسے نکال نہیں تو دوں گا ایک الٹے ہاتھ کی” کریم ڈرائیور کی مسافر خاتون سے بدتمیزی، گالم گلوچ ، اسلام آباد میں کریم ڈرائیور کی خاتون کے ساتھ بدتمیزی، اضافی کرایہ دینے سے انکار پر ڈرائیور نے خاتون کو گالم گلوچ کا نشانہ بنایااور غیر اخلاقی جملے کسے۔ ٹویٹر پر کریم کے آفیشل ہینڈل کو ٹیگ کرکے اپنی شکایت درج کروانے والی متاثرہ خاتون نے لکھا

کہ کس طرح سے ڈرائیور نے ان سے بدتمیزی کی اور انہیں ہراساں کیا۔ متاثرہ خاتون نے ٹویٹر پر لکھا کہ میں نے فیض آباد سے اپنے ہسپتال جانے کیلئےصبح پونے 5 بجے کریم کی رائیڈ بک کی، ڈرائیور نے میری پک اپ پوائنٹ پر پہنچ کر مجھ سے جھوٹ بولا کہ فیض آباد میں محرم الحرام کی سیکیورٹی وجوہات کے باعث موبائل نیٹ ورکس بند ہیں۔ خاتون نے لکھا کہ ڈرائیور نے مجھ سے رائیڈ کینسل کرنے کا کہا اور آفر کی کہ وہ مجھے 500 روپے میں میری منزل پر پہنچادے گا، (حالانکہ کریم کا فیئر 350 روپے تھا) مجھے ہسپتال وقت پر پہنچنا تھا اس لیے میں نے اس کی آفر قبول کرلی، اس ڈرائیور نے پورے راستے مجھے بے آرام کیے رکھا اور بیک ویو مرر میں مسلسل مجھے گھورے جارہا تھا اور مسکرائے جارہا تھا۔ انہوں نے مزید لکھا کہ میں نے اس حرکت کو نظر انداز کردیا، لیکن جب ہم فیض آباد پہنچے اور مجھے یہ اندازہ ہوا کہ نیٹ ورکس بالکل ٹھیک چل رہے ہیں تو میں نے اس سے پوچھا کہ تم نے جھوٹ کیوں بولا، میں تمہیں وہی کرایہ دوں گی جو کریم نے رائیڈ سے پہلے مجھے دکھایا، میرے سوال پر وہ آپے سے باہر آگیا اور مجھ پر چلانے لگا۔ خاتون نے کہاکہ ڈرائیور نے مجھے غلیظ گالیاں نکالتے ہوئے کہا کہ” پیسے نکال جتنے بولے ہیں، تو کر کیارہی ہے یہاں رات کو اکیلی، یاروں سے مل کر آجاتی ہیں اور پھر بکواس کرتی ہیں پیسے نکال”۔ خاتون نے کہا میں گاڑی سے باہر نکلی اس امید کے ساتھ کہ وہاں لوگ موجود تھے اور ڈرائیوران کے سامنے کسی بدتمیزی سے گریز کرے گا،

مگر وہ میرے پیچھے گاڑی سے باہر نکلا اور میرے اتنے قریب آگیا کہ اس کا جسم مجھے چھونے لگا، وہ مسلسل مجھ پر چلائے جارہا تھا، اس وقت میری ٹانگیں کانپ رہی تھیں، میرے اردگرد بہت سے مرد موجود تھے جو ایک عورت کو ایک شخص کے ہاتھوں گالم گلوچ کا نشانہ بنتے دیکھ کر مزے لے رہے تھے، اور ہنس رہے تھے۔ خاتون نے مزید لکھا کہ بالآخر جب ڈرائیور نے کہا کہ “پیسے دے نہیں تو دوں گا ایک الٹے ہاتھ کی” تو میں نے اسے پیسے دیئے اور وہاں سے چل پڑی، میں اب تک شاک کی کیفیت میں ہوں یہ سب لکھتے ہوئے میرے ہاتھ کانپ رہے ہیں۔ خاتون نے کریم کے ٹویٹر ہینڈل کو ٹیگ کرکے لکھا کہ کیا آپ اپنے ڈرائیورز کی ٹریننگ کی پرواہ کرتے ہیں، کیا ان کی بیک گراؤنڈ معلومات چیک کی جاتی ہیں، کیا آپ کو اپنے صارفین کی پرواہ ہے، میرے ساتھ جوہوا اس کا ذمہ دار کون ہے؟ آپ لوگ ایسا کیا قدم اٹھائیں گے کہ ایسا حادثہ دوبارہ رونما نہ ہو، میں اپنی زندگی کیلئے خطرہ محسوس کررہی ہوں۔ متاثرہ خاتون نے ڈرائیور کی کریم پروفائل کا سکرین شاٹ بھی شیئر کیا اور اس کے فون نمبر کی معلومات بھی اپنی ٹویٹس میں شامل کیں اور کہا کہ میں کریم ڈیلیٹ کررہی ہوں اور اپنی حفاظت کیلئے پستول کا لائسنس لے رہی ہوں۔ان تمام تر ٹویٹس کے بعد اس خاتون نے مرد کے معاشرے اور اس ملک کو گالیاں دینا شروع کردیں اور کہا کہ میں اپنے امتحانا ت پاس کرنے کے انتظار میں ہوں تاکہ میں اس ملک کو ہمیشہ کیلئے چھوڑ دوں اور ہاں میں تمام مردوں کو گالی دے رہی ہوں

بشمول میرے والد کے جن کا اے لیول سے ڈراپ ہونے والا بیٹا ہنڈا سوک چلاتا ہے مگر وہ اپنی ڈاکٹر بیٹی کیلئے گاڑی نہیں خرید سکتے، میں امید کرتی ہوں آپ سب مرجائیں اور جہنم میں جلائے جائیں۔ ان کی ٹویٹس کے جواب میں ردعمل دیتے ہوئے کریم کا کہنا تھا کہ ہم آپ کو مطلع کرنا چاہتے ہیں کہ واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈرائیور کے خلاف ضروری ایکشنز لیے ہیں، ہم ڈرائیورز کے رویوں پر بہت گہری نظر رکھتے ہیں اور قواعد و ضوابط کی کسی بھی قسم کی خلاف ورزی برداشت نہیں کی جاتی، تاہم ان کے اس ردعمل سے متاثرہ خاتون مطمئن نہیں ہوئیں۔

مزید پڑھیں !  نوجوان نے اپنی عمر سے 10 سال بڑی طلاق یافتہ خاتون سے شادی کرلی، تعلق کہاں سے ہے ؟ آقا کریم ﷺ کی

اپنی رائے کا اظہار کریں