ہمارے اچھے برتائوکا سب سے زیادہ مستحق کون ؟ماں یا باپ

کائنات نیوز! سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک شخص رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آیا اور دریافت کیا کہ میری بھلائی اور حسن معاملہ کا سب سے زیادہ مستحق کون ہے؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “ تیری ماں” ۔ اس نے پھر پوچھا کہ اس کے بعد؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “ پھر بھی تیری ماں” ۔ اس نے چوتھی مرتبہ پوچھاکہ اس کے بعد؟ تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “ پھر تیرا باپ۔”

بی کریم ؐ کے پسندیدہ سرکے کو گرم کر کے اس کی کلی کی جائے تو کیا فائدہ ملتا ہے ؟ جان کر آپ اسے

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!