ہر تیسرا شخص اِسی مرض کا شکار ہے،ہم نیند میں باتیں کیوں کرتے ہیں؟ اور ان پر کیسے قابو پایا جاسکتا ہے؟

کائنات نیوز! نیند میں باتیں کرنا ایک عام سی بات ہے اور اکثر افراد کو اس مسئلے کا سامنا ہوتا ہے- اگرچہ نیند میں بات کرنا بے ضرر ہوتا ہے اور اسے کسی بھی طبی علاج کی ضرورت نہیں ہوتی ہے، لیکن یہ آپ کے ساتھ سونے والے دیگر افراد کے لیے ضرور پریشانی کا باعث بن سکتا ہے اور ان کی نیند کو مثاتر کرسکتا ہے جس سے وہ ایک مکمل اور بھرپور نیند سے محروم ہوسکتے ہیں۔ آج ہم آپ کو بتائیں گے لوگ نیند میں باتیں کیوں کرتے ہیں

اور ان پر کیسے قابو پایا جاسکتا ہے؟ جینیاتی مسئلہ اگرچہ ماہرین اب تک اس حوالے سے کوئی حتمی رائے تو قائم نہیں کرسکےکہ لوگ نیند میں باتیں کیوں کرتے ہیں تاہم مختلف تحقیق کے دوران یہ بات ضرور سامنے آئی ہے کہ یہ مسئلہ جینیاتی بھی ہوسکتا ہے- فن لینڈ اور جاپان میں ہونے والی ایک تحقیق سے معلوم ہوا کہ اکثر جڑواں بچے نہ صرف نیند میں باتیں کرتے ہیں بلکہ انہیں ڈراؤنے خواب اور نیند میں چلنے کی عادت بھی ہوتی ہے- اس کے علاوہ بعض محققین کا یہ بھی ماننا ہے کہ جن والدین کو نیند میں باتیں کرنے کی عادت یا بیماری ہوتی ہے ان کے بچوں میں بھی یہ عادت پائی جاتی ہے- نیند کی کمی اگر آپ اپنی نیند پوری نہیں کرتے تو بھی آپ کو اس مسئلے کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے- طبی ماہرین کے مطابق جب لوگ دباؤ کا شکار ہوتے ہیں یا پھر بھرپور نیند سے محروم رہتے ہیں تو وہ نیند میں باتیں کرنے لگتے ہیں- درحقیقت جب ہم ٹھیک طرح سے آرام نہیں کرتے تو ہمارا دماغ متاثر ہوجاتا ہے جس سے ہماری نیند کے معیار پر بھی اثر پڑتا ہے- نیند کی خرابی آپ کو جان کر حیرت ہوگی کہ نیند میں باتیں کرنا اپنے آپ میں خود نیند کی خرابی ہے جسے somniloquy کہا جاتا ہے- اس کا شکار کوئی بھی کبھی بھی ہوسکتا ہے لیکن وہ لوگ جو نیند کی دیگر خرابیوں کا شکار ہوتے ہیں ان میں اپنے ساتھ سونے والوں کو پریشان کرنے کا خطرہ مزید بڑھ جاتا ہے- ڈاکٹروں کا خیال ہے کہ نیند میں باتوں کا نیند میں چہل قدمی اور خوابوں کے درمیان تعلق ہے۔ دواؤں کے اثرات ایسی بہت سی دوائیں ہیں جن کے نیند پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں- ان اثرات میں نیند میں باتیں کرنا بھی شامل ہوتا ہے-

بعض دواؤں کے اثرات کی وجہ سے مریض صرف نیند میں باتیں ہی نہیں کرتے بلکہ نیند میں ہاتھ پاؤں بھی چلاتے ہیں یہاں تک کہ بستر سے چھلانگ بھی لگا دیتے ہیں- یہ دوائیں عموماً ڈپریشن کو کنٹرول کرنے کے لیے استعمال جاتی ہیں- مسئلے پر قابو کیسے پایا جائے؟ اس مسئلے کا حل تو اب تک تلاش نہیں کیا جاسکا لیکن چند تبدیلیاں کر کے آپ اپنی نیند میں باتیں کرنے کی عادت پر قابو ضرور پا سکتے ہیں- جیسے کہ: اس وقت کھانا کھانے سے گریز کریں جب آپ کا سونے کا وقت قریب ہو آپ کا بستر اور تکیہ آرام دہ ہو ایسے مشروبات سے پرہیز کریں جو کیفین پر مشتمل ہوں اپنے روزانہ سونے کے اوقات کو ہمیشہ ایک جیسا رکھیں

اپنی رائے کا اظہار کریں