اپنا بیانیہ اپنے پاس رکھو۔۔۔ دو بڑی سیاسی جماعتوں نے نوازشریف کا ساتھ چھوڑ دیا، اپوزیشن اتحادی ریزہ ریزہ

کائنات نیوز! سابق وزیراعظم نوازشریف کا بیانیہ پی ڈی ایم پر بوجھ بننے لگا ،پیپلز پارٹی کے بعد مزید دو جماعتوں نے نواز شریف کی طرف سے قومی سلامتی کے اداروں کو نشانہ بنانے پر اعتراض اٹھا دیا،قومی وطن پارٹی اور جمعیت اہلحدیث آج پی ڈی ایم اجلاس میں معاملہ اٹھائیں گی۔ذرائع کے مطابق پی ڈی ایم میںبھی پھوٹ پڑنا شروع ہو گئی ہے

پیپلز پارٹی کے بعد 2 جماعتوں نے بھی اداروں پر تنقید پر تحفظات کا اظہار کر تے ہو ئے کہاکہ قومی سلامتی ودفاعی اداروں کی قیادت کو نشانہ بنانا ہمارا ایجنڈا نہیں پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے بھی بلاول بھٹو کے موقف سے اتفاق کیا ہے۔فضل الرحمٰن بھی کسی شخصیت کا نام لینے کی بجائے سلیکٹرز یا اسٹیبلشمنٹ کے نام استعمال کرنے کے حامی ہیں ۔ پی ڈی ایم کا اجلاس آج دن دو بجے مسلم لیگ ن کے سیکرٹریٹ میں ہوگا جسکی صدارت مولانا فضل الرحمٰن کرینگے، نوازشریف ویڈیو لنک کے زریعے اجلاس سے خطاب کرینگے ۔بلاول کی بھی ویڈیو لنک کے زریعے ہی شرکت کا امکان اجلاس میں پی ڈی ایم کی آئندہ کی حکمت عملی اور حکومت مخالف تحریک کو آگے بڑھانے پر غور ہوگا ، نوازشریف کے بیانیے کی وجہ سے اپوزیشن جماعتوں کو درپیش صورتحال پر بھی تبادلہ خیال ہوگا۔

 

اپنی رائے کا اظہار کریں