قبرسے آوازیں آتی ہیں۔۔شیخوپورہ میں ایک نوجوان نے اپنی ماں کی قبر کھود ڈالی

کائنات نیوز! شیخوپورہ کے علاقہ شیش محل کے رہائشی نوجوان عفت نے والدہ صاحبہ بی بی کی قبر کشائی کر ڈالی، نوجوان کا موقف ہے کہ قبر کشائی کی نوبت اس لئے آئی کہ میری والدہ کی قبر سے آوازیں آتی ہیں لہٰذا میری والدہ زندہ ہے تاہم جب خاندان کے درجنوں افراد اور سینکڑوں شہریوں کی موجودگی میں قبر کشائی کی گئی تو ایسے کوئی شواہد نہ مل پائے جبکہ نوجوان نے بھی موقف تبدیل کردیا اور کہا کہ

وہ آوازیں جو میری والدہ کی قبر سےآتی تھیں وہ اب بند ہوگئی ہیں جس کے بعد قبر کو دوبارہ بند کردیا گیا۔ مگر مذہبی رہنماؤں کی طرف سے قبر کشائی کے خلاف شدید ردعمل سامنے آیا ہے اور مذکورہ نوجوان کے ساتھ ساتھ انتظامیہ کو بھی اس کا ذمہ دار قرار دیا ہے اور مطالبہ کیا ہے کہ معاملہ کی انکوائری کرکے ذمہ داروں کا تعین کیا جائے ورنہ یہ رجحان بڑھنے سے قبروں کی بے حرمتی کے دلخراش واقعات رونما ہوتے رہیں گے۔ واضح رہے کہ دو گھنٹے تک جاری رہنے والے قبر کشائی کےاس عمل کے دوران نہ تو متعلقہ افسران میں سے کسی نے کوئی مداخلت کی اور نہ ہی پولیس موقع پر پہنچی حالانکہ یہ قبر کشائی کیلئے نہ تو کوئی اجازت لی گئی تھی اور نہ ہی مذہی طور پر یہ عمل قابل برداشت ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!