انتظار کی گھڑیاں ختم! لڑکا کون کیا کام کرتے ہے؟ جانیں

انتظار کی گھڑیاں ختم

کائنات نیوز! ٹک ٹاک سٹار حریم شاہ اپنی ویڈیو ز کے ذریعے سوشل میڈیا صارفین کو حیرت اور کشمکش میں مبتلا کرنے فن خوب رکھتی ہیں لیکن اس مرتبہ انہوں نے انسٹاگرام پر ایسی تصویر شیئر کر دی ہے کہ ہر کوئی دنگ رہ گیاہے اور ان کی منگنی کی افواہیں چل نکلی ہیں ۔تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر زیادہ متحرک رہنے والیمتنازع ٹک ٹاکر حریم شاہ نے اپنے تصدیق شدہ انسٹاگرام اکاونٹ پر ایک خصوصی پوسٹ شیئر کی ہے۔

حریم شاہ نے اپنی انسٹا پوسٹ میں ایک تصویر شیئر کی جس میں ایک لڑکے اور لڑکی کا ہاتھ نظر آرہا ہے۔تصویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ لڑکے اور لڑکی دونوں نے اپنے ہاتھوں میں منگنی کی انگوٹھی پہنی ہوئی ہے۔حریم شاہ نے اپنی اس پوسٹ کے کیپشن میں کچھ نہیں لکھا لیکن ایک سوالیہ نشان چھوڑ دیا ہے کہ کیا واقعی حریم شاہ کی منگنی ہوگئی ہے۔ٹک ٹاکر کی یہ پوسٹ دیکھنے کے بعد صارفین کی جانب سے بھی سوشل میڈیا پر اس طرح کے سوال ہی پوچھے جارہے ہیں تاہم حریم شاہ خاموش ہیں۔

اناللہ واناالیہ راجعون نامورپاکستانی کھلاڑی انتقال کرگئے

 کبڈی کے نوجوان انٹرنیشنل کھلاڑی عابد پربانہ کے انتقال کرگئے۔انٹرنیشنل کھلاڑی عابد پربانہ کے انتقال پر پاکستان کبڈی فیڈریشن کی جانب سے شدید افسوس کا اظہار کیا جارہا ہے۔اسحوالے سے سیکریٹری کبڈی فیڈریشن رانا سرور نے کہا کہ نوجوان کھلاڑی کا آج انتقال ہوا جبکہ سب ساتھی غمزدہ ہیں۔رانا سرور نے کہا کہ عابد پربانہ نے ایشین گیمز اور ساؤتھ ایشین گیمز سمیت کئی انٹر نیشنل ایونٹس میں پاکستان کی نمائندگی کی۔=”سابق نگران وزیر اعظم جسٹس (ر)میر ہزار خان کھوسو انتقال کرگئے”>سابق نگران وزیر اعظم جسٹس (ر)میر ہزار خان کھوسو انتقال کرگئے پاکستان ٹائمز! سابق نگران وزیر اعظم جسٹس (ر)میر ہزار خان کھوسو علالت کے باعث کوئٹہ کے نجی اسپتال میں انتقال کرگئے ۔میر ہزار خان کھوسو 24 مارچ کو پاکستان کے 18 ویں وزیر اعظم منتخب ہوئے وہ ایک جج تھے آپ وفاقی شرعی عدالت کے چیف جسٹس رہے ہیں اور آپ پاکستان کے عبوری وزیر اعظم بھی رہے۔

میرہزارخان کھوسہ بلوچستان کے ضلعجعفر آباد کے کے قصبے اعظم خان میں 30 ستمبر 1929 کو پیدا ہوئے۔1954 میں سندھ یونیورسٹی سےگریجویشن کی اس کے دو سال بعد انھوں نے کراچی یونیورسٹی سے وکالت کی ڈگری حاصل کی۔کھوسو جو اپنی سادگی کے لیے نام سے جانا جاتا ہے، نے 1957 میں اس وقت کے مغربی پاکستان کراچی بنچ کے ایک وکیل کے طور پر اپنے پیشہ ورانہ کیریئر کا آغاز کیا اور اس کے بعد 1980 ء میں سپریم کورٹ کے وکیل بن گئے۔ پھر انھیں 1977 میں بلوچستان ہائی کورٹ میں ایک جج بنا دیا گیا؛ اور انہوں نے اگلے دو سال تک اس عہد7 پر کام کیا۔ ان کی مارچ 1985 میں ایک اضافی جج کے طور پر تقرری کی گئی انہیں 1987 ء میں صوبائی ہائی کورٹ کا مستقل جج بنا دیا گیا۔پھر انھیں 1989 میں چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ بنا دیا گیا۔ انھیں دو مرتبہ مختصر سی مدت کے لیے نگران گورنر بلوچستان بھی بنایا گیا

پہلی مرتبہ انھیں 25 جون سے 12 جولائی 1990 تک جبکہ دوسری بار 13 مارچ 1991 سے 13 جولائی 1991تک نگران گورنر بنایا گیا۔ ہائیکورٹ سے ریٹائرمنٹ کے بعد وہ وفاقی شرعی عدالت کے جج مقرر ہوئے 1991 میں انھیں وفاقی شرعی عدالت کا چیف جسٹس مقرر کر دیا گیا وہ 1994 تک اس عہدے پر براجمان رہے۔ انتہائی ایماندار ہونے کی وجہ سے آپ کو زکوۃ کونسل کے چیرمین مقرر ہوئے۔ زکوۃ کونسل کے چیرمین ہونے کی وجہ سے انھوں نے لمبے عرصے تک سیاست سے کنارہ کشی اختیار کر لی۔ الیکشن کمیشن نے میر ہزار خان کھوسو کو 24 مارچ کو پاکستان کے 18 واں وزیر اعظم منتخب کیا الیکشن کمیشن نے حکومت اور حزب اختلاف کے چار ناموں میں سے آپ کا انتخاب کیا۔آپ کے تین بیٹے ہیں شفاقت کھوسو، برکت کھوسو اور امجد کھوسو۔ آپ کے بیٹے امجد خان کھوسو نے پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کرلی ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!