سابق وزیرا عظم شاہد خاقان عباسی کی حکومت پر تنقید کوئی بھارت جارہا ہے،توکوئی اسرائیل ملک کی کسی کو فکر نہیں کہاں جارہا ہے

شاہد خاقان عباسی

کائنات نیوز ! سابق وزیراعظم و مسلم لیگ (ن) کے سینیئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی نے امریکا کے فوجی اڈے مانگنے اور معاہدوں کی تفصیل پر ایوان کو اعتماد میں لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاہے کہ کوئی اسرائیل جارہا ہے کوئی بھارت ،ملک کی فکر نہیں کہاں جارہا ہے۔ میڈیا سے گفتگو میں شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ کیس یہ ہے

کہ ایل این جی ٹرمینل نہیں لگنا چاہیے تھا ،اسٹیٹ بینک کہتا ہے کہ بجلی کی مد میں ایل این جی سے 234 ارب روپے کا فائدہ ملا۔انہوں نے کہا کہ آپ ایل این جی نہیں خریدیں گے تو بجلی بند ہو جائے گی، اوپن چیلنج ے ، وزیر پیٹرولیم بتائیں 4 ڈالر میں ایل این جی مل رہی تھی تو آپ نے نہیں لی اور ابھی 11 ڈالر پر ٹینڈر دیا۔انہوںنے کہاکہ وزیروں نے ملکی معیشت تباہ کر دی اور اربوں ڈالر کا نقصان پہنچایا۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ چیئرمین نیب کو ملکی تباہی نظر نہیں آتی؟ وزیروں کی نالائقی کی وجہ سے کراچی میں پوری انڈسٹری بند ہے، وزیروں کو اپنا کام نہیں آتا، اربوں ڈالر کا نقصان اورملک کو ڈبو دیا ہے۔انہوںنے کہاکہ 7 سال سے گیس ٹرمینل 96 فیصد کی استعداد پر چل رہا ہے، اگلے ہفتے پانچ دن کیلئے بند کرنا ہے مگر کابینہ نے فیصلہ کیا کہ ہم ٹرمینل بند نہیں کر سکتے کیونکہ پاکستان کی بجلی بند ہو جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ ناکام جماعت ،ناکام حکومت ہے اور ناکام وزیراعظم ہے جس طرح وہ اقتدار میں آئے تھے، پورا پاکستان جانتا ہے۔شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ ہمیں بھارت، افغانستان اور اسرائیل کی فکر ہے، اپنے ملک کی فکر کریں کہ ملک کدھر جا رہا ہے؟ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ نواز شریف علاج کرانے گئے تھے، علاج کرا کے آئیں گے اگر آپ کو یہ بات نہیں پسند تو اپنا زور لگا لیں۔سابق وزیراعظم نے امریکا کے فوجی اڈے مانگنے اور امریکا سے معاہدوں کی تفصیل پر ایوان کو اعتماد میں لینے کا مطالبہ کیا۔ذلفی بخاری کے دورہ اسرائیل کے سوال پرطنزیہ کہا کہ وہ رنگ روڈ کے پلاٹ بیچنے گئے تھا

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!