نبی کریم صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کی پسندیدہ غذا جو کی روٹی بنانے

نبی کریم صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کی پسندیدہ غذا جو کی روٹی بنانے

کائنات نیوز! جَوقدرت کا عطا کردہ ایک عظیم تحفہ ہے، جس کا استعمال انسانی جسم کے لیے بہت فائدہ مند ہے۔ اسے غذائیت سے بھرپور اناج سمجھا جاتا ہے۔ غذائیت سے بھر پور جو کے دلیے کو روزانہ کی غذا کا حصہ بنا لینے سے بے شمار فوائد حاصل ہوتے ہیں جن میں دل کی صحت بہتر اور کینسر جیسے موزی مرض کے خطرات میں کمی واقع ہوتی ہے۔

دنیا بھر میں جَو کو اوٹ میل کوکیز، اوٹ گرین بریڈ یا پھر مختلف صورتوں میں خوراک کا حصہ بنایا جاتا ہے۔جو کے آٹے کی روٹی ان لوگوں کیلئے فائدہ مند جو اپنا وزن تیزی سے کم کرنا چاہتے ہیں اور بھوکے بھی نہیں رہنا چاہتے اس روٹی کو کھا کر آپ کا وزن تیزی سے کم ہوتا ہے کیونکہ جو میں گلوٹن موجود نہیں ہوتا جبکہ گندم کی روٹی میں بہت زیادہ گلوٹن پایا جاتا ہے۔ گلوٹن گندم میں بہت زیادہ مقدار میں موجود ہے ۔ یہ وزن کو کم نہیں ہونے دیتا اور آپ کے جسم میں انسولین رزسٹنز کے پیدا ہونے کی سب سے بڑی وجوہات میں سے ایک وجہ ہے ۔ اگر جو کی بات کریں اس میں گلوٹن کم مقدار میں پایا جاتا ہے اس کے علاوہ جو میں ایسے کمپاؤنڈ ہوتے ہیں جو وزن کی کمی میں مدد کرتے ہیں

۔چربی کو جمع نہیں ہونے دیتے جو کے اندر بہت زیادہ مقدار میں بیٹا گلوکن موجود ہے ۔ جو گٹ میں جانے کے بعد جل کی شکل اختیار کرلیتا ہے اس لیے جو کی روٹی کھانے کے کافی لمبے عرصے بعد تک آپ کو زیادہ بھوک محسوس نہیں ہوتی ۔ اس کے علاوہ بیٹا گلوکن آپ کی ٹمی ایریا پر سے چربی کو پگھلانے میں مددگار ہوتا ہے ۔ اس میں دونوں قسم کے فائبر موجود ہوتے ہیں۔جو میں موجود فائبر آنتوں کی صفائی کر تا ہے اور زہریلے اور فاضل مادوں کو آنتوں سے صاف کرنے میں مدد کرتا ہے ۔ جو میں انسولیبل فائبر گڈ بیکٹریا کی مقدار کو بڑھانے میں مدد کرتا ہے ۔ جو وہ واحد اناج ہے جس کو کھاتے ہیں تو فاضل مادہ آپ کے جسم میں نہیں چھوڑتا ہے جوپہلے سے فاضل مادے موجود ہوتے ہیں

ان کو صاف کردیتا ہے ۔ جو کی روٹی استعمال کرنے سے معدہ اور آنتے ڈی ٹاکس ہوتی ہیں۔اس لیے آپ کا جسم کھائے گئے کھانے سے بہتر طور پر نیوٹریشن کو جذب کرپاتی ہے ۔ آپ کا نظام انہضام مضبوط ہوتا ہے ۔جو کی روٹی بنانے کا طریقہ یہ ہے کہ جتنا آٹا گوندنا ہے اس سے آدھا پانی لیکر کسی برتن میں ڈال کر گرم کرلینا ہے ۔ ہم نے ایک کپ آٹا گوندنا ہے تو ہم نے آدھا کپ پانی لیکر اسے برتن میں ڈال کر گرم کرلینا ہے ۔ جب پانی گرم ہورہا ہے تو اس میں ایک چٹکی نمک شامل کرلینا ہے۔ جب پانی کے ببلز بننے لگ جائیں تو آٹاشامل کرکے چمچ کی مدد سے مکس کرلینا ہے ۔ جیسے ہی آٹا ڈالنا ہے چولہے کو بند کرلینا ہے تیز چمچ ہلاکر پانی میں آٹے کو مکس کرلینا ہے ۔اس کے آٹا نکال کر جیسے گندم کا آٹا گوندتے ہیں

اسے گوندھ کر روٹی تیار کرلیں ۔ یہ آپ کیلئے بہت فائدہ مند ہے ۔سائنس اب بتارہی ہے کہ اس میں بہت زیادہ فوائد ہیں لیکن ہمارے پیارے حبیبﷺ نے چودہ سو سال پہلے ہی جو کی افادیت کے بارے میں ہمیں آگاہ کردیا۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!