پریشانیوں سے لڑنا ہے تو دو باتیں سیکھ لو

پریشانیوں سے لڑنا

کائنات نیوز! اپنے اندر کے خوف کو ختم کر دو تو تم دنیا کے کا میاب انسان بن جا ؤ گے۔ اپنے خواب کے لیے سمجھو تا کروں لیکن اپنے خواب پرکبھی سمجھوتہ نہ کرو۔ اللہ تعالیٰ نے انسان کے ہاتھ میں صرف نیت اور کوشش دی ہے کامیابی وہ خود دیتا ہے۔ ہر ایک کی سنو اور ہر ایک سے سیکھو کیونکہ ہر کوئی سب کچھ نہیں جا نتا مگر ہر کوئی کچھ نہ کچھ ضرور جانتا ہے! جب تھک جاؤ تو رکنا مت رکنا تب ہےْ

جب کام مکمل کر لو! ہمیشہ خوش رہا کرو۔ کیونکہ پریشان ہونے سے کل کی مشکل دور نہیں ہو جا تی بلکہ آج کا سکون بھی چلا جا تا ہے اپنے کل کو بہتر کرنے کے لیے اپنے آج کو بہتر کرو۔ پہچان سے ملا کام کچھ وقت کے لیے اور کام سے ملی پہچان ہمیشہ کے لیے ہو تی ہے۔ انسان کو جسمانی طاقت نہیں بلکہ ایمان کی طاقت مضبوط بنا تی ہے۔ اصل کا میابی تو یہ ہے کہ آپ کیسے دوبارہ کھڑے ہو تے ہیں شکست کے بعد آپ اپنی شکست کا خود مطالعہ کر تے ہیں اور پھر کا میابی حاصل کر تے ہیں۔ زندگی تمہیں بہت کچھ دینا چاہتی ہے مگر اس کے لیے پہلے تمہیں قابل بننا ہو گا۔ ایک بزرگ رحمۃ اللہ علیہ کا فرمان ہے آج کا کام کل پر مت چھوڑو کیونکہ کل ایک نیا کام ہوگا او اس بات میں کوئی شک نہیں کہ جان بوجھ کر آج کے کام کو کل پر مت چھوڑنا یعنی کہ کام کو موخر کرنا بہت بڑی نحوس ہے اور یہ نااہلی اور بعض اوقات سستی کی علامات بھی سمجھی جاتی ہے،

اس مختصر تحریر میں کام کو موخر کرنے کے اسباب، نقصانات اور اس کا حل بیان کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ کام موخر کرنے کے اسباب:کام پسند نہ ہوناسستی اس کام کا اہل نہ ہونابیماری کام مکمل کرنے کا حدف مقرر نہ کرناکام کےلیے بہت زیادہ مہلت کا مل جانااحساس کمتری ہونا یعنی کہ میں ابھی کام کے قابل نہیں جب قابل ہوجاؤں تو کرلوں گا۔ وقت کا احساس نہ ہونا۔کام موخر کرنے کے نقصانات :کام بعض اوقات ہوہی نہیں پاتاکام معیار کے مطابق نہیں ہوتافرض نماز اگر موخر کرتے رہے یہاں تک کہ قضا ہوگئی تو اس کا آخرت میں یہ انجام لوگوں کی نظر میں آدمی گر جاتا ہے لوگ اعتماد نہیں کرتے ایسے شخص پرانسان مستقبل میں صرف کوئی بڑی منزل حاصل نہیں کرسکتا۔ان مسائل کا حل : اپنے اندر احساس ذمہ داری پیدا کریں۔ بتکلف کام کو وقت پہ کریں۔عباداتِ الہیہ وقت پر ادا کریں اس سے دیکھا گیا ہے انسان وقت کا پابند بن جاتا ہے۔

جب بھی کام کریں مکمل خود اعتمادی سے کریں ۔ اپنے کام کا ہدف بنالیں کہ میں نے یہ کام اتنے وقت میں کرنا ہے اور اسے کوشش کریں وقت سے قبل ہی مکمل کر لیں اور جلد بازی سے بھی کام نہ لیں کہ یہ بھی ایک نحوست ہے۔اللہ عزوجل سے دعا ہے کہ اللہ پاک ہمیں اپنا ہر کام وقت پر کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں