دوسری شادی کی خواہش کرنا مہنگا پڑ گیا! پاکستان کے وفاقی وزیر کے گھر صفِ ماتم بچھ گئی

کوہاٹ (آن لائن نیوز) دوسری شادی کی خواہش کرنا مہنگا پڑ گیا! پاکستان کے وفاقی وزیر کے گھر صفِ ماتم بچھ گئی،  شہریار آفریدی کے بھتیجے کی خود کو ختم کرنے کے ڈرامے کا ڈراپ سین ہو گیا ہے۔ جواد آفریدی کی جانب سے دوسری شادی کی خواہش پر اہلیہ نے والد اور ڈرائیور کے ساتھ ملاپنے ہی شوہر کی زندگی کو ہمیشہ کے لیے ختم کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق 8مارچ کو وزیرِسیفران شہریار آفریدی کے بھتیجے کی خود کو ختم کرنے کی خبر آئی تھی۔ ابتدائی طور پر یہ کہا گیا تھا کہ جواد آفریدی نے خود ہی اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا ہے،

جس کے بعد پولیس نے نعش کو تحویل میں لے کر تفتیش شروع کردی تھی۔ جواد آفریدی کے اہلخانہ نے تصدیق کی تھی کہ جواد آفریدی نے بعض وجوہات کی بناء پر خود ہی اپنی زندگی کا خاتمہ کیا ہے تاہم تھانہ کے ٹی اے پولیس نے نوجوان جواد آفریدی کی نعش ہسپتال منتقل کرکے تحقیقات شروع کردی تھیں اور اب پولیس نے سراغ لگایا ہے کہ جواد آفریدی کو انکی بیوی نے ہی ختم کیا ہے۔پولیس کے مطابق جواد آفریدی کو ان کی اہلیہ ماہ نور دختر بابر آفریدی نے پستول کی مدد سے اہنے شوہر جواد آفریدی کی زندگی کا خاتمہ کیا، اور اس کارروائی میں اسے اپنے والد بابر آفریدی اور ڈرائیور اسرار ولد سلیم گل کی معاونت حاصل تھی. اس سارے‌ڈرامے کی وجہ یہ بنی کہ جواد آفریدی دوسری شادی کرنا چاہتا تھاا جس پر میاں بیوی کے مابین ناچاقی پیدا ہوئی جبکہ سسر کی طرف سے بھی انہیں اس بارے دھمکیاں ملی تھیں۔

پولیس نے جواد آفریدی کے والد سلطان آفریدی کی مدعیت میں مقدمہ درج کر لیا اور ایک ماہ کے اندر اندر اس ڈرامے کا بھانڈا کوھاٹ پولیس نے پھوڑ دیا. ذرائع کے مطابق واقعہ کے ایک ملزم اسرار ولد سلیم گل کو کے ڈی اے پولیس نے گرفتار کر لیا ہے تاہم ابھی تک جواد آفریدی کی بیوہ ماہ نور اور اسکے والد کو ابھی تک گرفتار نہیں کیا جاسکا ہے۔ پولیس ملزمان کی تلاش کر رہی ہے، پولیس کا کہنا ہے کہ جلد ملزمان کو گرفتار کرلیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں! عورت کیلئے ایک شادی کا حکم کیوں دیا گیا؟سائنس بھی حیران ہو گئی

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!