مفتی صاحب کو چاند نظر نہیں آتا چھوٹا سا کورونا کہاں نظر آئے گا۔ فواد چوہدری ایک بار پھر منیب الرحمان سے ناراض ہوگئے

اسلام آباد (آن لائن نیوز) وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ مفتی منیب الرحمان کا احترام ہے لیکن ان کو اتنا بڑا چاند نظر نہیں آتا اتنا چھوٹا کرونا وائرس کہاں سے نظر آنا ہے۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنی ٹویٹ میں وفاقی وزیر فواد چوہدری کا کہنا تھاکہ مولانا منیب الرحمان ہمارے بزرگ ہیں اور ان کا احترام بھی ہے،

لیکن ان کو اتنا بڑا چاند نظر نہیں آتا تو اتنا چھوٹا کورونا وائرس کہاں سے نظر آنا ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ وزارت مذہبی امور کی توجہ دلائی ہے کہ آپ کی وزارتی کمیٹی کے سربراہ اگر حکومتی احکامات کا یوں مذاق اڑائیں گے تو باقی لوگوں سے کیا توقع رکھی جاسکتی ہے۔ فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ رمضان کا 24 اپریل کو نظر آجائے اور پہلا روزہ 25 اپریل کو ہو گا، پہلے ارادہ تھا کہ اس بار چاند دیکھنے کے لئے عوام کو اکٹھا کریں گے، لیکن کورونا نے ہر اجتماع منسوخ کرا دیا، تاہم اگر آئندہ سال موقع ملا تو چاند رات کو تقریب کا انعقاد کریں گے۔ اس سے قبل ویت ہلاک کمیٹی کے چئیر مین اور عالم دین مفتی منیب الرحمان نے فواد چوہدری کے ٹویٹ پر اپنے ردعمل میں کہا کہ میں فواد چوہدری کو منہ نہیں لگانا چاہتا اور نہ ہی انہیں اس قابل سمجھتا ہوں کہ منہ لگایا جائے۔ مفتی منیب نے فوادچوہدری کو اخلاقی وائرس قرار دیدیا اور کہا کہ ایک تو یہ جسمانی وائرس پھیلا ہوا ہے لیکن فواد چوہدری اخلاقی وائرس ہیں۔ ان کی کچھ سیاسی محرومیاں ہیں جن میں ہم نے انہیں مبتلا نہیں کیا۔ جہاں سے انہیں محرومیاں لاحق ہیں، انکی بارگاہ میں جائیں اور انکے سامنے اپنی آرزوئیں پیش کریں، علماء کو انہیں منہ لگانے کی ضرورت نہیں ہے۔ مفتی منیب نے مزید کہا کہ یہ پاکستانی قوم جانتی ہے کہ کس کی وجہ سے آفات نازل ہوتی ہیں، علماء ہیں یا فواد چوہدری جیسے لوگ ہیں۔

یہ فیصلہ میں عوام پر چھوڑتا ہوں۔ واضح رہے کہ فواد چوہدری نے کہا تھا کہ رجعت پسند مذہبی طبقے کی جہالت کی وجہ سے کرونا کی وباء پاکستان میں پھیلی اب ہمیں کہتے ہیں اللہ کا عذاب ہے توبہ کریں، اللہ کا عذاب جہالت ہے جو ان لوگوں کی صورت میں ہم پر مسلط ہے، علماء جو علم اور عقل رکھتے ہیں اللہ کی نعمت ہیں ان کی قدر کریں لیکن جہلاء کو عالم کا درجہ دیناتباہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں! یہ تو حال ہے عوام کا! گھراورمسجد میں محدود کیے گئے 16 افراد فرارا، نتظامیہ کی دوڑیں لگ گئیں

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!