بریکنگ نیوز:حکومت پاکستان کامساجد و مدارس کیلئے4 ماہ کے بجلی، گیس اور پانی کے بل معاف کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد (کائنات نیوز) بریکنگ نیوز:حکومت پاکستان کامساجد و مدارس کیلئے4 ماہ کے بجلی، گیس اور پانی کے بل معاف کرنے کا فیصلہ، چیئرمین پاکستان علماء کونسل و صدر وفاق المساجد و المدارس پاکستان حافظ محمد طاہر محمود اشرفی نے لاک ڈاؤن کی وجہ سے مدارس و مساجد کے مسائل پر وزیراعظم عمران خان کو خط لکھ دیا، حافظ محمد طاہر اشرفی نے لکھا کہ

اللہ رب العزت سے دعا گو ہوں کہ اللہ کریم غم اور کرب کے ان لمحات کو جلد از جلد ختم فرما دیں، کرونا کی وبا ءجو بلا شبہ ہمارے اعمال کا نتیجہ ہے اس سے نجات عطا ء فرما دیں اور ہم سب سے اسلام اور پاکستان کی خدمت لے لیں۔ مزید لکھا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے مدارس و مساجد بند ہیں، ماہ رجب تا ماہ شوال مدارس و مساجد کی امداد کرنے والے مخیر حضرات تعاون فرماتے تھے، اس سال چونکہ یہ وباء آ گئی ہے اور مدارس و مساجد بند ہیں۔ مساجد میں عوام الناس کا آنا ممنوع ہے لہذا دیگر طبقات کی طرح اہل مدارس و مساجد کیلئے بھی مشکلات پیدا ہو گئی ہیں۔میری آپ سے گذارش ہے کہ از راہ مہربانی چار ماہ کیلئے ابتدائی طور پر مساجد و مدارس کے بجلی، گیس ، پانی کے بل ختم کر دیے جائیں اور اسی طرح حکومت کی طرف سے جو ریلیف کے امور سر انجام دیے جا رہے ہیں اس میں بھی مدارس عربیہ کے اساتذہ، علماء و مشائخ، آئمہ، موذن اور خطباء کوبھی شریک کیا جائے۔ آخر میں انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ وزیراعظم فوری طور پر اس پر حکم جاری کریں گے۔پاکستان علماء کونسل کے چیئرمین اور صدر وفاق المساجد و المدارس پاکستان کے سربراہ علامہ طاہر محمود اشرفی نے وزیر اعظم عمران خان سے مطالبہ کیا ہے کہ کورونا وائرس اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے دیگر طبقات کی طرح اہل مدارس و مساجد کیلئے بھی مشکلات پیدا ہو گئی ہیں

لہذا فوری طور پر مساجد و مدارس کے بجلی، گیس اور پانی کے بل چار ماہ کے لئے ختم کئے جائیں۔علامہ حافظ طاہر محمود اشرفی نے لاک ڈاؤن کی وجہ سے مدارس و مساجد کے مسائل پر وزیراعظم عمران خان کو خط لکھتے ہوئے کہا ہے کہ اللہ رب العزت سے دعا گو ہوں کہ اللہ کریم غم اور کرب کے ان لمحات کو جلد از جلد ختم فرما دیں، کرونا کی وبا ء جو بلا شبہ ہمارے اعمال کا نتیجہ ہے اس سے نجات عطا ء فرما دیں اور ہم سب سے اسلام اور پاکستان کی خدمت لے لیں۔انہوں نے کہا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے مدارس و مساجد بند ہیں، ماہ رجب تا ماہ شوال مدارس و مساجد کی امداد کرنے والے مخیر حضرات تعاون فرماتے تھے، اس سال چونکہ یہ وباء آ گئی ہے اور مدارس و مساجد بند ہیں،مساجد میں عوام الناس کا آنا ممنوع ہے لہذا دیگر طبقات کی طرح اہل مدارس و مساجد کیلئے بھی مشکلات پیدا ہو گئی ہیں لہذا میری آپ سے گذارش ہے کہ از راہ مہربانی چار ماہ کیلئے ابتدائی طور پر مساجد و مدارس کے بجلی، گیس، پانی کے بل ختم کر دیے جائیں اور اسی طرح حکومت کی طرف سے جو ریلیف کے امور سر انجام دیے جا رہے ہیں اس میں بھی مدارس عربیہ کے اساتذہ، علماء و مشائخ، آئمہ، موذن اور خطباء کوبھی شریک کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں! لو جی، نواں کٹا کُھل گیا! کرکٹر حسن علی کی بھی متنازعہ ویڈیو منظرِِ عام پر آگئی

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!