شرم تو گہری نیند سوگئی! سنی لیون پر شرمناک کام کرنے کے الزام میں مقدمہ درج، خواتین کی حرمت پامال

ممبئی (آن لائن نیوز) بالی ووڈ اداکارہ سنی لیون ایک کے بعد ایک مقدمات میں پھنستی چلی جارہی ہیں۔ بھارتی میڈیا کے مطابق بھارت کے شہر اجمی رمیں پولیس نے فحاشی پھیلانے پر بالی ووڈ اداکارہ سنی لیون، گوگل سرچ انجن کے سی ای او اور ایک میگزین کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے۔ پولیس حکام کے مطابق میگزین کے انٹرنیٹ لنک پر فحش مواد اوراداکارہ سنی لیون کی

قابل اعتراض تصاویر ہیں جس کی باعث خواتین کی حرمت کو نقصان پہنچانے اور آئی ٹی ایکٹ کے تحت مقدمے کا اندارج کیا گیا ۔واضح رہے کہ سنی لیون کے خلاف فحش ویب سائٹ چلانے پر ریاست مہاراشٹرا اور گوا میں بھی مقدمات درج ہیں۔ دوسری جانب سنی لیونی نے اپنی پیشہ ورانہ زندگی کا آغاز عریاں ماڈلنگ اور سافٹ کور فحش نگاری سے کیا۔ 2007ء کے موسم گرما میں سنی نے سرجری کے ذریعے اپنے پستانوں کو بڑا کروایا اور کیمرے کے سامنے مردوں کے ساتھ جماع پر رضا مندی ظاہر کی لیکن یہ شرط عائد کی کہ وہ صرف اپنے منگیتر میٹ ایرکسن کے ساتھ ہی یہ عریاں مناظر فلمبند کروائے گی۔ سنی نے میٹ کے ساتھ فرجی جماع کے کئی مناظر کیے۔ بالی ووڈ کی فلموں میں آمد سے کچھ عرصہ قبل سنی نے ایک دبری جماع کے منظر میں بھی کام کیا۔ سنی لیونی جب بھی کسی فلم کی شوٹنگ پر ہوں تو وہ ہر 15-20 منٹ بعد اپنے پیروں کو دھوتی رہتی ہیں. انکی یہ حرکت دیکھ کر شوٹنگ پر موجود کیمرہ مین اور ڈائرکٹر بھی حیران رہ جاتے ہیں. شوٹنگ پر موجود لوگوں کا کہنا ہے کہ وہ سنی لیونی کو بار بار پانی سے اپنے پاؤں دھوتے دیکھ کر حیران رہ جاتے ہیں.

مزید پڑھیں! بیوی سے ہمبستری کے بعد غسل کا صیح طریقہ

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: Content is protected !!